واٹس ایپ نے اعلان کیا ہے کہ اب اس کے صارفین کسی بھی ایک پیغام کو پانچ سے زیادہ بار فارورڈ نہیں کر سکیں گے۔ ایسا جعلی خبروں کے پھیلاؤ کو روکنے کی منشا سے کیا جا رہا ہے

واٹس اپ کمپنی نے پھلے ہی یہ پالسی انڈیا میں لاگو کردی تھی


گزشتہ برس واٹس ایپ کے ذریعہ پھیلنے والی جعلی خبروں کے باعث انڈیا میں بھیڑ میں ہلاکت کے متعدد معاملے سامنے آئے۔ جس کے بعد واٹس ایپ نے یہ پالیسی انڈیا میں نافذ کر دی تھی۔ ابھی تک انڈیا کے علاوہ کہیں بھی، ایک پیغام یوزر بیس مرتبہ فارورڈ کر سکتے تھے۔ تاہم جعلی خبروں کے بازار کو دنیا بھر میں بند کرنے کے مقصد سے میسیجیز فارورڈ کرنے کی حد پانچ تک لانے کے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

راوں برس انڈیا میں ہونے والے انتحبات پے پوری دنیا کی نظر ہے اور اس کے بعد انڈونیشیا میں انتحبات ہونے جا رہے ہیں ۔ جکارتہ میں ہونے والے اجلاس میں واٹس اپ نے یہ نئی پالسی کے بارے میں بتایا اس پالسی کا مقصد جعلی خبروں کی روک تھام ہے


واٹس ایپ کمپنی کے بلاگ کے حوالے سے انڈین میڈیا کا کہنا ہے کہ انڈیا میں چھ مہینے سے لاگو اس حد کے اثرات کا جائزہ لینے کے بعد کمپنی نے تازہ فیصلہ کیا ہے۔ اور اس فیصلے کے مطابق اب انڈیا ہی نہیں بلکہ دنیا بھر میں کہیں بھی میسیجیز کو پانچ سے زیادہ بار فارورڈ نہیں کیا جا سکے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں