ایردوگان اور قطر کے درمیان مشکوک ڈیل سے ترکی کی قومی سلامتی کو خطرہ۔ ۔

ترکی کے صدر اجب طیب ادگان کی حکومت نے دسمبر 2018 میں قطر کے ساتھ ایک مالی معاہدے کو پالیمنٹ کے زریعے بڑی تیز رفتی سے منضور کروایا جس کے بعد اردگان نے اپنے ملک میں 20 ارب ڈالر زیادہ مالیت کے ٹینک بنانے والی کمپنی کو چاندی کی طشتری میں رکھ کر بکتربند گاڑی بنانے والی ترک اور قطر کی مشترکہ کمپنی بی ایم سی کے حوالے کر دیا۔ ۔

بین الاقوامی جریدے کی رپورٹ کے مطابو قطری فوج کا بی ایم سی کمپنی میں 9۔49 فیصد شیرز ہیں جبکہ عصام سنجق کے 25 فیصد اور ترکی کے 1۔25 فیصد شیرز ہیں ۔ عصام سنجق ترک صدر رجب طیب اردگان کے تجارتی مشیر ہیں۔ ۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ٹینک بنانے والی کمپنی ترک فوج کی ملکیت ہے لہذا اس کو کسی دوسری کمپنی میں ذم کرنا یا نجکاری کرنا ترکی کے قومی اسلامتی پر اثرات مرتب کرئے گا۔ ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں