گاڑی کے اندر سے فائرنگ ہوئی نہ کوئی دہشتگردی کا سامان ملا،پولیس جھوٹ بول رہی ہے‘عینی شاہد بچے عمیر کا بیان۔ ۔

ساہیوال واقعہ میں شہید ہونے والے خلیل اور واقعہ کا عینی شاہد 8 سالہ عمیر نے جوئنٹ انویسٹیگیشن ٹیم کو تحریری بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے انتہائی دردناک انکشاف کیے ہیں ۔ عمیر کا کہنا ہے کہ پہلے ایک نقاب پوش پولیس اہلکار نے انکل ذیشان کو قتل کیا اور پھر کسی سے فون میں بات کی اور پھر میرے باپ ، ماں اور بہن کو بھی قتل کردیا ۔ پولیس کو غاڑی میں سے کسی بھی قسم کا کوئی دہشتگردی کا سامان نہیں ملا اور نہ ہی گاڑی سے کوئی فائرنگ ہوئی۔ ۔ ۔

عینی شاہد 8 سالہ عمیر جس کو شاید قتل کا مطلب بھی معلوم نہ ہو اس نے جے آئی ٹی کو اپنا تحریری بیان ریکارڈ کروا دیا۔ ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں